الأربعاء، 08 صَفر 1440| 2018/10/17
Saat: (M.M.T)
Menu
القائمة الرئيسية
القائمة الرئيسية

المكتب الإعــلامي
ولایہ پاکستان

ہجری تاریخ    20 من رمــضان المبارك 1439هـ شمارہ نمبر: PR18040
عیسوی تاریخ     منگل, 05 جون 2018 م

 

ہندو ریاست کے سامنے تحمل کی پالیسی ذلت اور شکست پرمبنی پالیسی ہے

  • جو ہمارے دشمن کی حوصلہ افزائی کرتی ہے

 

4 جون 2018  کو ڈائریکٹر جنرل آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے اس بات کی تصد یق  کی کہ ہندو ریاست کی جارحیت کے خلاف پاکستان کی ریاستی پالیسی تحمل پرمبنی ہے۔ انہوں نے کہا:”بھارت کی جانب سے پہلی گولی آنے سے اگر کوئی نقصان نہیں ہوتا تو جواب نہیں دیں گے“۔انہوں نے پاکستان کے موقف کی مزید وضاحت کرتے ہوئے کہا ”ہم دوایٹمی طاقتیں ہیں اور جنگ کی کوئی گنجائش نہیں ہے“۔ یہ باتیں اس وقت کی جارہی ہیں جبکہ جنرل موصوف خود اس بات کا گلا کررہے ہیں کہ لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باونڈری پر ہندو ریاست کی مسلسل جارحیت کی وجہ سے پاکستان کے کئی شہری شہید ہوئے ہیں۔ یہ بذاتخوداس بات کا ثبوت ہے کہ ہندو ریاست کی جارحیت کے خلاف تحمل کی پالیسی ایک ناکام پالیسی ہے جس کی وجہ سے ہندو ریاست کی حوصلہ افزائی ہو رہی ہے کہ وہ پاکستان کے خلاف جارحانہ رویہ اپنائے رکھے۔ ہندو ریاست کے خلاف جنگ کے امکان کو سرے سے ہی رد کردینا درحقیقت کشمیر کے مسئلہ اور وادی میں ہندو مظالم کے شکار مسلمانوں سے دستبرداری کا اعلان ہے کیونکہ مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں کی حالتزار افواج پاکستان کے منظم جہاد کے بغیر کسی صورت تبدیل  نہیں ہو سکتی۔

 

اے پاکستان کے مسلمانو!

رمضان کے مقدس مہینے میں، وہ مہینہ جو مسلمانوں کے لیے تاریخی طور پر کامیابیوں اور عزت کامہینہ ہے ، ہماری قیادت نے واضح طور پر ہندو ریاست کی جارحیت کے خلاف ہتھیار پھینک دینے کا اعلان کر دیا ہے جو برصغیرکے مسلمانوں کو مٹانے کے درپے ہے۔ ہندو ریاست اور مقبوضہ کشمیر میں مسلمانوں سے جو سلوک کیاجاتا ہے وہ اس بات کی یاددہانی ہے کہ کیوں ہمارے آباؤ اجداد نے ہندو مشرکین کے اقتدار تلےرہنے سے انکار کیا تھاکیونکہ ہندؤں کے دلوں میں برصغیر کے مسلمانوں کے خلاف بغض ، کینہ اور نفرت بھری  ہوئی ہے۔ اللہ سبحانہ و تعالیٰ نے قرآن میں فرمایا،

 

 

لَتَجِدَنَّ أَشَدَّ ٱلنَّاسِ عَدَاوَةً لِّلَّذِينَ آمَنُواْ ٱلْيَهُودَ وَٱلَّذِينَ أَشْرَكُواْ

”(اے پیغمبرﷺ!) تم دیکھو گے کہ مومنوں کے ساتھ سب سے زیادہ دشمنی کرنے والے یہودی اور مشرک ہیں“(المائدہ:82) ۔

 

ایک ایسے وقت میں جب پاکستان پانی کے شدید بحران کا شکار ہے اور جب ہندو ریاست کےہمارے خلاف عزائم ہمارے ہی دریاوں پر ڈیم بنا کر واضح ہوچکے ہیں، پاکستان کے حکمران امریکی ہدایت پر ہندو ریاست کے ساتھ تعلقات کی بحالی کے لیے کام کررہے ہیں تا کہ علاقائی طاقت بننے میں اس کی مدد کی جائے اور وہ برصغیر کے امور کی نگرانی کر سکے۔ ان حکمرانوں میں کوئی شرم کوئی حیاء نہیں ہے۔ یہ ہمارے دشمن کو اپنے ہاتھوں سے مضبوط کررہے ہیں اور پھر ہمارے سامنے بہانے پیش کر رہے ہیں کہ”دو ایٹمی ممالک کے درمیان جنگ ممکن نہیں“،” کشمیر کا کوئی فوجی حل نہیں“ اور ”تعلقات کی بحالی معاشی فوائد کا باعث بنے گا“ تا کہ اپنی غداری اور خطے میں امریکی مفادات سے وفاداری پر پردہ ڈالسکیں۔

 

اے افواج پاکستان کے افسران!  

آپ کیسے یہ قبول کرسکتے ہیں کہ آپ کے دشمن کے سامنے آپ کے ہاتھ پاوں باندھ کر آپ کوذلیل ہونے کے لیے کھڑا کردیا جائے جبکہ آپ میں یہ صلاحیت موجود ہے کہ آپ اسے چھٹی کا دودھ یاد کرادیں؟ آپ کیسے اپنی قیادت کے ان بہانوں کو قبول کرسکتے ہیں جن کا مقصد آپ کو گمراہ کرکے دشمن کی جارحیت کے خلاف حقیقی منہ توڑ جواب دینے سے آپ کو روکنا ہے؟آپ کے پاس یہ صلاحیت ہے کہ آپ ہندو ریاست کے منصوبوں اور خطے میں بالادستی کی اس کی خواہش کو ملیا میٹ کردیں۔ یہ جان لیں کہ ہندو ریاست کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے کامنصوبہ ایک امریکی منصوبہ ہے  تا کہ آپ پر ہندو ریاست کی بالادستی کو قائم کیا جائے اور یہ منصوبہ صرف آپ کے حکمرانوں کی معاونت سے ہی کامیاب ہوسکتا ہے۔  آپ ان حکمرانوں کو ہٹانے کے لیے فوراً حرکت میں آئیں اور نبوت کے طریقے پر پاکستان میں خلافت کے قیام کے لیے حزب التحریر کو نصرۃفراہم کریں۔  پھرآپ اس علاقے میں اسلام کی بالادستی کو بحال کردیں گے جیسا کہ ماضی میں تھا اور آپ اس علاقے کے جائز حکمران بن کر ابھریں گے،کشمیر کو آزاد کرائیں گے اور برصغیر پر ہندو مشرکین کے غیر منصفانہ حکمرانی کا خاتمہ کردیں گے۔

 

وَأَعِدُّواْ لَهُمْ مَّا ٱسْتَطَعْتُمْ مِّن قُوَّةٍ وَمِن رِّبَاطِ ٱلْخَيْلِ تُرْهِبُونَ بِهِ عَدْوَّ ٱللَّهِ وَعَدُوَّكُمْ وَآخَرِينَ مِن دُونِهِمْ لاَ تَعْلَمُونَهُمُ ٱللَّهُ يَعْلَمُهُمْ وَمَا تُنفِقُواْ مِن شَيْءٍ فِى سَبِيلِ ٱللَّهِ يُوَفَّ إِلَيْكُمْ وَأَنْتُمْ لاَ تُظْلَمُونَ

”اور جہاں تک ہوسکے (فوج کی جمعیت کے) زور سے اور گھوڑوں کے تیار رکھنے سے ان کے (مقابلے کے) لیے مستعد رہو کہ اس سے اللہ کے دشمنوں اور تمہارے دشمنوں اور ان کے سوا اور لوگوں پر جن کو تم نہیں جانتے اور اللہ جانتا ہے ہیبت بیٹھی رہے گی۔ اور تم جو کچھ اللہ کی راہ میں خرچ کرو گے اس کا ثواب تم کو پورا پورا دیا جائے گا اور تمہارا ذرا نقصان نہیں کیا جائے گا“(الانفال:60)

 

 ولایہ پاکستان میں حزب التحریر کا میڈیا آفس

المكتب الإعلامي لحزب التحرير
ولایہ پاکستان
خط وکتابت اور رابطہ کرنے کا پتہ
تلفون: 
http://www.hizb-ut-tahrir.info
E-Mail: [email protected]

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.

دیگر ویب سائٹس

مغرب

سائٹ سیکشنز

مسلم ممالک

مسلم ممالک